ایل این جی کیس،شاہد خاقان عباسی کے ریمانڈ میں 14روزتوسیع

اسلام آباد : وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کی احتساب عدالت نے ایل این جی کیس میں گرفتار پاکستان مسلم لیگ (ن)کے سینئر نائب صدر اور سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی کے جسمانی ریمانڈ میں 14روز کی توسیع کر دی ہے۔

احتساب عدالت کے ڈیوٹی جج شاہ رخ ارجمند نے نیب حکام کو ہدایت کی ہے کہ آئندہ سماعت پر تفتیش مکمل کر کے شاہد خاقان عباسی کو عدالت میں پیش کیا جائے۔ جسمانی ریمانڈ ختم ہونے پر شاہد خاقان عباسی کو نیب راولپنڈی کے حکام نے احتساب عدالت میں پیش کیا۔

نیب پراسیکیوٹر نے دوران سماعت عدالت کو بتایا کہ ایل این جی ٹرمینل کا ٹھیکہ دینے میں جو بے قاعدگیاں ہوئیں اس کیس میں شاہد خاقان عباسی گرفتار ہیں اور اس سے قبل وہ 41روزہ جسمانی ریمانڈ کاٹ چکے ہیں اور ان سے تفتیش ہو رہی ہے اور ابھی تفتیش مکمل نہیں ہوئی اور مزید تفتیش کے لئے شاہد خاقان عباسی کا 14 روزہ جسمانی ریمانڈ دیا جائے ۔

اس موقع پر عدالت نے شاہد خاقان عباسی سے استفسار کیا کہ آپ کیا کہنا چاہیں گے تو اس پر شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ میں جسمانی ریمانڈ کی درخواست کی مخالفت نہیں کروں گا میں پہلے ہی کہہ چکا ہوں کہ 90روزہ جسمانی ریمانڈ منظور کر لیا جائے۔ شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ میں نے کوئی جرم نہیں کیا ، نیب تفتیش مکمل کر لے مجھے کوئی مسئلہ نہیں ہے۔

عدالت نے نیب کی استدعا منظور کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کے جسمانی میں 14روز کی توسیع کرتے ہوئے انہیں نیب راولپنڈی کے حکام کے حوالہ کر دیا۔ عدالت نے نیب کو حکم دیا ہے کہ آئندہ 14روز میں شاہد خاقان عباسی سے تفتیش مکمل کرکے عدالت کو آگاہ کیا جائے

اپنا تبصرہ بھیجیں