ایل او سی تیتری نوٹ کراسنگ پوائنٹ پر ہزاروں کشمیریوں کا دھرنا

تیتری نوٹ۔ آزاد کشمیر اور مقبوضہ کشمیر کو تقسیم کرنے والی لائن آف کنٹرول کے تیتری نوٹ کراسنگ پوائنٹ پر پولیس کی رکاوتوں کو توڑتے ہوئے آزاد کشمیر کے ہزاروں نوجوان پہنچ گئے ہیں ۔ لائن آف کنٹرول عبور کر کے مقبوضہ کشمیر جانے اور محصور کشمیریوں سے یک جہتی کرنے کے خواہش مند نوجوانوں نے تیتری نوٹ کراسنگ پوائنٹ پر دھرنا دے دیا ہے ۔ اس دوران جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ کے رہنما سردار انور سمیت 15 افراد زخمی ہو گئے ہیںجموں وکشمیر لبریشن فرنٹ قائدین عبدالحمید خان عمر نذیر کشمیری، راجہ مظہراور شعیب خان ، خواجہ خلیل کشمیری کو درجنوں ساتھیوں سمیت کراسنگ پوائنٹ کی طرف جاتے ہوئے گرفتار کر لیا گیا۔عمر نذیر لیاقت حیات ، یاسر ارشاداحسن اسحاق، محسن خان ، صغیر خان کے فرزند علی صغیر اور دیگر پولیس کارروائی سے معمولی زخمی ہوئے۔ ایک کارکن احسن گڈو سمیت اٹھ زخمی افراد کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا۔جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ ( صغیر خان) کے سربراہ صغیر خان کی قیادت میں ہفتے کے روز راولاکوٹ سے ہزارون نوجوان تیتری نوٹ کی طرف روانہ ہوئے تھے ۔ پولیس نے خاردار تاریں اور رکاوٹیں کھڑی کرکے روکنے کی کوشش کی تاہم بڑی تعداد میں نوجوان رات دو بجے تیتری نوٹ پہنچ گئے۔ ریلی جب ہجیرہ شہر داخل ہوئی تو و ایڈمنسٹریٹرہجیرہ ظہیر احمد خان اور صدر انجمن تاجران ہجیرہ الطاف خان نے شہر میں شٹر ڈائون کروا کر ریلی کا استقبال کیا اس سے قبل پوسٹ گریجویٹ کالج راولاکوٹ سے جے کے ایل ایف کے سربراہ صغیر خان کی قیادت میں ریلی کا آغاز کیا گیا ۔ شرکاء نے مقبول بٹ کی تصاویر اور کشمیر کے جھنڈوں کے ساتھ جے کے ایل ایف کے جھنڈے اُٹھا رکھے تھے۔ اس ریلی میں صغیر خان کے ساتھ انجمن تاجران آزاد کشمیر کے صدر افتخار فیروز راولاکوٹ، انجمن تاجران کے قائدین وسیم خورشید ، مصطفیٰ سعیدڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر جاوید نثار ایڈووکیٹ ، مسلم لیگ ن کے رہنما جاوید شریف ایڈووکیٹ ، نیشنل عوامی پارٹی کے سنئیر نائب صدرصغیر چوہدری NSF یوتھ ونگ کے صدر توصیف خالقNSFمارک سسٹ کے صدر زبیر لطیف اور آزاد ی پسند تنظیموں کی قیادت موجود تھی ، ہزاروں افراد کا یہ مارچ جب راولاکوٹ شہر کی سڑکوں پر نکلا تو لوگوں نے گھروں اور دکانوں کی چھتوں پر کھڑے ہو کر اُن کا استقبال کیا ۔ تین کلو میٹر تک ریلی پیدل چلتے ہوئے پرانے پٹرول پمپ تک گئی ۔ جہاں سے ریلی گاڑیو ں پر تیتری نوٹ کی طرف روانہ ہوئی۔انجمن تاجران راولاکوٹ کی اپیل پر راولاکوٹ شہر میں سیز فائر لائن کی طرف آزاد ی مارچ کرنے والے قافلے کو الوداع کہنے رضا کارانہ شٹر ڈائون، راولاکوٹ کے تعلیمی اداروں کو بند کر دیا گیا تھا

اپنا تبصرہ بھیجیں