ماڈل کورٹس نےمجموعی طور پر 394 مقدمات کا فیصلہ کیا

اسلام آباد: پاکستان کی 373ماڈل کورٹس نے گزشتہ روزمجموعی طور پر 394 مقدمات کا فیصلہ کیا۔ پہلے مرحلے میں قائم کردہ 167 ماڈل کورٹس نے قتل کے21اور منشیات کے91مقدمات یعنی112مقدمات کا فیصلہ سنا دیا۔تمام عدالتوں نے کل538گواہان کے بیانات قلمبند کیے۔۔جس کے مطابق پنجاب میں قتل کے9اور منشیات کے64،اسلام آباد میں منشیات کے1، سندھ میں قتل کے10اور منشیات کے16، خیبر پختونخواہ میں قتل کے2اور منشیات کے5 جبکہ بلوچستان میں منشیات کے5مقدمات کا فیصلہ ہوا۔ایک مجرم کو سزائے موت، 5 کو عمر قید کی سزا سنائی گئی جبکہ دیگر18 مجرمان کو کل70سال6 ماہ 10 دن قید اور2425468روپے جرمانہ کی سزا سنائی گئی96سول ایپلٹ ماڈل کورٹس نے آج مجموعی طور پر 233دیوانی، فیملی اور رینٹ اپیلوں و درخوست نگرانی کے فیصلے کر دیے۔110 ماڈل مجسٹریٹس عدالتوں نے49مقدمات کے فیصلے کر دیے۔ تمام عدالتوں نے271گواہان کے بیانات قلمبند کیے۔مجموعی طور پر 8مجرمان کو 3سال،6ماہ قید اور 30000روپے جرمانہ کی سزا سنائی گئی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں