عدالت عظمٰی کا خیبر پختونخواہ کی سرکاری جائیداد وں کا ڈیجیٹل ریکارڈ تیار کرنے کا حکم

aiksath.com.pk

اسلام آباد:عدالت عظمٰی نے خیبر پختونخواہ کی سرکاری جائیداد وں کا ڈیجیٹل ریکارڈ تیار کرنے کا حکم دیا ہے۔

جسٹس قاضی فائز عیسٰی کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نےپشاور میونسپل کارپوریشن میں زمین کے ایک تناذعے سے متعلق کیس کی سماعت کرتے ہوئے صوبے کی سرکاری جائدادوں کو محفوظ بنانے کے لیے تمام سرکاری املاک کا روایتی ریکارڈ کے ساتھ ساتھ ڈیجیٹل ریکارڈ بھی تیارکرنے کا حکم دیا۔

عدالت نے درخواست گزار تیمورحسین کی خریدی زمین کے قبضہ کے لیے پشاورمیونسپل کارپوریشن کیخلاف درخواست پرسماعت کی تو عدالت نے روایتی انداز میں سرکاری ملاک کا ریکارڈ رکھنےکا نوٹس لیا اور صوبائی حکومت کو دور جدید کے تقاضوں کے مطابق سرکاری املاک کے ریکارڈ کوڈیجیٹلائز کرکے چھ ماہ میں عمل درآمد رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ۔

عدالت نے ہدایت کی کہ سرکاری املاک کی نشاندہی کے لیے ریکارڈ میں تمام انٹریزشامل کی جائیں اور صوبے کی سرکاری املاک کا ریکارڈ ہرلوکل گورنمنٹ میں رکھا جائے۔عدالت نے ہدایت کی چیف سیکرٹری اور سیکرٹرل لوکل گورنمنٹ عدالتی احکامات تمام لوکل گورنمنٹ حکام تک پہنچائے۔

عدالت نے لوکل گورنمنٹ کے ساتھ ساتھ سرکاری املاک کاڈیجیٹل ریکارڈ سیکرٹری لوکل گورنمنٹ ودیہی ترقی آفس میں بھی محفوط رکھنے اور سرکاری املاک کے نقصان پر متعلقہ افراد کے خلاف قانون کے مطابق کاروائی عمل میں لا نے کی ہدایت کی ۔