یوسف عباس شریف کی ضمانت کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج

aiksath.com.pk


اسلام آباد:نیب نے چوہدری شوگر ملز کرپشن کیس میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کے بھتیجے یوسف عباس شریف کی ضمانت کا فیصلہ سپریم کورٹ میں چیلنج کر دیا ہے۔

نیب نے لاہور ہائی کورٹ کے 18فروری کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی ہے جس میں یوسف عباس شریف کی ضمانت کے فیصلے کو کالعدم کرنے کی استدعا کی ہے۔

درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ ضمانت کے مقدمات میں اصول قانون طے شدہ ہے لیکن ہائی کورٹ نے اپنے فیصلے میں طے کردہ اصولوں سے انحراف کیا جبکہ کرپشن کے مقدمات میں سپریم کورٹ کے طے کردہ پیرا میٹرز کو بھی نظر انداز کیا گیا۔

درخواست میں سپریم کورٹ کے فیصلے کا حوالہ دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ کرپشن کے مقدمات میں غیر معمولی صورتحال میں ضمانت دی جاسکتی ہے لیکن یوسف عباس کے معاملے میں یہ صورتحال نہیں تھی جبکہ ہارڈ شپ کا بھی کوئی معاملہ نہیں تھا ۔

درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ ملزم یوسف عباس چوہدری شوگر ملز کے سی ای اوتھے اور اس حیثیت میں مذکورہ شوگر ملز میں ہونیوالی کرپشن میں ان کا کلیدی کردار رہا۔ملزم نے سابق وزیر اعظم سے قریبی رشتہ ہونے کا ناجائز فائدہ اٹھایا اور نواز شریف کیساتھ ملکر اربوں روپے کی کرپشن کی لیکن  ہائی کورٹ نے ان حقائق کا درست طور پر جائزہ نہیں لیا اور ضمانت کی درخواست منظور کرلی۔

درخواست میں استدعا کی گئی ہے کہ ریکارڈ پر موجود شواہد اور حقائق کی بنیاد پر یوسف عباس شریف کی  ضمانت منسوخ کی جائے۔