پاکستان میں کام کرنے والی خواتین کی تعداد میں اضافہ

aiksath.com.pk

اسلام آباد: ملک بھرمیں گذشتہ 6سال کے دوران مختلف شعبوں میں کام کرنے والی خواتین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہو ا ہے، پرچون کے کاروبار سے ٹرانسپورٹ ، سیوریج ،مواصلات کے شعبوں میں بھی خواتین سامنے آئی ہیں ،

وزارت منصوبہ بندی کی دستاویزات میں انکشاف کیا گیا ہے کہ ادارہ شماریات 1963سے صنفی بنیادوں پر لیبر فورس کاسروے کررہاہے جس میں مختلف شعبوں میں افرادی قوت کے اعداوشمار دیئے جاتے ہیں ،

وزارت منصوبہ بندی کے اعدادوشمار کے مطابق 2009-10سے2017-18تک ملز میں کام کرنے والے مزدوروں کی تعداد91لاکھ70ہزار اضافہ ہوا ہے ، سال 2009-10کے لیبر سروے کے مطابق مختلف شعبوں میںمجموعی طور پر5کروڑ63لاکھ30ہزارلیبرفورس کام کررہی ہے جس میں 4کروڑ35لاکھ30ہزارمردجبکہ ایک کروڑ32لاکھ6لاکھ 60ہزار عورتیں لیبر فورس میں شامل ہیں

سال 2010-11کے سروے میں لیبر فورس کی تعداد5کروڑ72لاکھ40ہزار تھی، جس میں 4کروڑ39لاکھ50ہزار مرد جبکہ ایک کروڑ 32لاکھ90ہزار عورتیں شامل تھیں ،سال2012-13کے سروے میں لیبر فورس کی تعداد5کروڑ98لاکھ40ہزار تھی جس میں 4کروڑ 59لاکھ 80ہزار مرد، ایک کروڑ37لاکھ60ہزار عورتیں شامل ہیں ،

سال2013-14میں لیبر فورس کی تعداد بڑھ کر 6کروڑ60لاکھ ہوگئی جن میں 4کروڑ 66لاکھ 50 ہزار مرد، ایک کروڑ 44لاکھ 50ہزار عورتیں شامل تھیں 2014-15میں مجموعی طور پر لیبر فورس 6کروڑ10لاکھ4ہزار میں سے4کروڑ63لاکھ80ہزار مرد جبکہ ایک کروڑ 46لاکھ60ہزار عورتیں شامل ہیں ۔

سال2017-18کے لیبر سروے کے مطابق لیبر فورس کی تعداد بڑھ کر6 کروڑ 55لاکھ ہوچکی ہے جس میں سے 5کروڑ4لاکھ40ہزار مرد اور ایک کروڑ 47لاکھ60ہزار عورتیں شامل ہیں ، سروے کے مطابق مذکورہ اعدادو شمار کے مطابق ہر شعببہ زندگی میں عورتیں افرادی قوت کے طور پر سامنے آئی ہیں ۔