اقوام متحدہ کے مبصر مشن کو کشمیرکی صورتحال کاجائزہ لے

aiksath.com.pk

اسلام آباد:صدرمملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ اقوام متحدہ کے مبصر مشن کو کشمیرکی صورتحال کاجائزہ لینے کی اجازت ہونی چاہیے ۔ مقبوضہ وادی میں بھارتی ظلم و ستم کا سلسلہ جاری ہے۔ 7دہائیوں سے کشمیر کامسئلہ حل طلب ہے۔ یہ تقسیم ہند کا نامکمل ایجنڈا ہے ، عالمی برادری کو اس مسئلے کے حل پر خصوصی توجہ دینے کی ضرورت ہے۔

وہ ایوان صدر میں کشمیر کے موضوع پر سیمینار سے خطاب کررہے تھے۔ اس موقع پر وفاقی وزیر امور کشمیرعلی امین گنڈاپور اور چیئرمین کشمیر کمیٹی سیدفخر امام نے بھی خطاب کیا۔ صدرمملکت نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فورسز کا ظلم و ستم کا سلسلہ جاری ہے ۔ معصوم کشمیریوں کیخلاف پیلٹ گنز کا استعمال کیا گیا۔

انہوں نے کہاکہ پاکستان مسئلہ کشمیر کا پرامن حل چاہتا ہے ۔ کشمیریوں کوحق خودارادیت ملنا چاہیے۔ تقسیم برصغیر کے فارمولے کے مطابق کشمیر کا پاکستان سے الحاق ہونا چاہیے۔ انہوں نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر اور آزادکشمیر کے عوام کے حقوق کے تحفظ میں واضح فرق ہے۔ بھارت ہندوتوا نظریے پر عمل پیرا ہے۔ مقبوضہ کشمیر کے علاوہ بھارت میں بھی مسلمان غیر محفوظ ہیں ۔ بھارتی گجرات میں فسادات کے دوران تین ہزار سے زائد مسلمان قتل ہوئے بھارت میں اقلیتیں محفوظ نہیں بھارت میں متنازعہ شہریت قانون سے اقلیتوں کو سخت خطرات لاحق ہیں ۔

انہوں نے کہاکہ بھارت اپنے اندرونی مسائل پر پاکستان کو مورد الزام ٹھہرارہا ہے۔ اقوام متحدہ مبصرین کو مقبوضہ وادی کے حالات کا جائزہ لینے کی اجازت ہونی چاہیے۔ کشمیریوں کی آوازبلندکررہے ہیں بھارتی افواج نے مقبوضہ وادی میں تعلیم اور کاروباری شعبے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے۔ 5 فروری کو ملک بھر میں بھرپور طریقے سے یوم یکجہتی کشمیر منایا جائے گا۔ پاکستان کشمیریوں کی اخلاقی سفارتی اور سیاسی حمایت جاری رکھے گا ۔

صدر مملکت نے کہاکہ دور جدید میں لوگوں کو ان کے حقوق سے محروم رنہیں رکھا جاسکتا ۔ عالمی برادری کو معاشی مفادات کی خاطر اخلاقیات نظر انداز نہیں کرنی چاہیے۔ بھارتی دہشت گردی سے کوئی بھی ہمسایہ ممالک محفوظ نہیں ہے ۔ بھارتی حکومت ہندو نظریے پر عمل پیرا ہے ۔ بھارت میں مسلمانوں پر زمین تنگ کردی گئی ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے مودی کا مکروہ چہرہ دنیا کے سامنے بے نقاب کیا ہے۔ ہندوستان میں تمام اقلیتوں کے لوگ محفوظ نہیں۔

انہوں نے کہا کہ مودی مسلمانوں کا قاتل ہے ۔ اقوام متحدہ سے اپیل ہے کہ وہ کشمیر پر اپنی قراردادوں پر عملدرآمد یقینی بنائے کشمیری اپنی حق خودارادیت کے منتظر ہیں۔ وزیراعظم عمران خان نے واضح کردیا ہے کہ ہم کشمیریوں کے ساتھ کھڑے ہیں اور ان کی آزادی تک ساتھ کھڑے رہیں گے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے بھی واضح طورپر کہہ دیا ہے کہ ہم کشمیر کے مسئلے کے حل کیلئے آخری فوجی اور آخری خون کے قطرے تک لڑیں گے۔ پاکستان کی 22کروڑ عوام کشمیریوں کے ساتھ ہے ۔ عالمی برادری کشمیریوں کے درد کو محسوس کرے ،

جبکہ وفاقی وزیر امور کشمیر علی امین گنڈاپور نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ بھارت نے مقبوضہ کشمیر میں 80 لاکھ کشمیریوں کو محصورکررکھا ہے۔ مسئلہ کشمیر برصغیر کی نامکمل تقسیم ہے۔ مسئلہ کشمیر پر اقوام متحدہ کی قراردادیں موجود ہیں۔ 70برس سے بھارتی افواج اقوام متحدہ کی قراردادوں کی خلاف ورزی کررہی ہیں۔ بھارتی افواج نے مقبوضہ کشمیر میں ظلم و بربریت کی انتہا کردی ہے۔ گزشتہ 70 برس میں ایک لاکھ سے زائد کشمیریوں کو شہید کیا گیا۔ پیلٹ گنز کے استعمال سے 30 ہزار سے زائد کشمیریوں کی بینائی متاثر ہوئی۔ بھارت خطے میں دہشت گردی پھیلا رہا ہے اس نے خطے کا امن دائو پر لگا رکھا ہے۔ عالمی برادری سے اپیل ہے کہ کشمیریوں کے ساتھ کھڑی ہو۔

انہوں نے کہاکہ دنیا میں پاکستان ہی ہے جوکشمیریوں کادرد محسوس کررہا ہے کشمیر کا مسئلہ آزادی اورخود مختاری کا مسئلہ ہے کشمیری آزادی چاہتے ہیں ان کو حق خودارادیت ملنا چاہیے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو نے اعتراف کیا کہ وہ پاکستان میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں ملوث تھا اور اس حوالے سے ٹھوس ثبوت بھی موجود ہیں تاکہ وہ خود اپنی آنکھوں سے دیکھ سکیں کہ وہاں کتنا ظلم و ستم ہورہا ہے ۔۔

چیئرمین کشمیر کمیٹی سید فخر امام نے کہا کہ کشمیری 70 سال سے بھارتی ظلم و ستم برداشت کررہے ہیں ۔ پاکستان کشمیریوں کے ساتھ کھڑا ہے اور کشمیریوں کی حق خودارادیت کے حصول تک پرعزم ہیں۔ 70 برس گزرنے کے باوجود کشمیریوں کی مشکلات کم نہیں ہوئیں۔ انہوں نے کہاکہ مودی سرکارکشمیریوں کی نسل کشی پر تلا ہواہے عالمی برادری اس کا نوٹس لے۔