بھارتی فوج کشمیرمیں سنگین جرائم کی مرتکب ہورہی ہے، سردار عتیق

aiksath.com.pk

مظفرآباد: آل جموں وکشمیر مسلم کانفرنس کے قائدوسابق وزیراعظم سردارعتیق احمدخان نے کہا کہ ہندوستان کی فوج آرمڈفورس اسپیشل پاور ایکٹ اور پبلک سیفٹی ایکٹ جیسے کالے قوانین کی چھتری کے نیچے سنگین جرائم کا مرتکب ہورہی ہے لیکن بدقسمتی سے مقبوضہ کشمیر میں ہونے والی ہلاکتوں،تشدد اور انسانی حقوق کی پامالیوں کے اصل اعدادوشمار محصور ریاست سے باہر نہیں آرہے ہیں۔

انہوں نے عالمی برادری پر زور دیا ہے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں کرفیو اٹھانے کے لیے ہندوستان پر دبائو ڈالے تاکہ مقبوضہ کشمیر کے مظلوم عوام کو کورونا وائرس کے موجودہ حالات کے تناظرمیں ادویات، خوراک کی فراہمی کو یقینی بنایاجاسکے۔ہندوستان نے مقبوضہ کشمیر میں غیر معینہ مدت کے لئے کرفیو اور پابندیاں عائدکر رکھی ہیں جس کے باعث80لاکھ افراد کی حالت ناگفتہ بہہ ہے ۔

ان کا کہنا تھا کہ بی جے پی کی قیادت میں ہندوستانی حکومت اقلیتوں کے ساتھ براسلوک کررہی ہے جس کی ہم مذمت کرتے ہیں۔ ہندوستان میں مسلمانوں کے خلاف بڑھتی ہوئی نفرت اسلامی فوبیا کا نوٹس لے۔ انہوں نے مزیدکہا کہ کشمیری عوام پر جو دوہری قیامت ڈھائی جارہی ہے اس پر آواز اٹھانا اور ہندوستان کو مظالم سے باز رکھنے کے لیے اس کاہاتھ رکھنا بین الاقوامی برادری کی اخلاقی اور انسانی ذمہ داری ہے ۔

سردار عتیق کا کہنا تھا کہ اب وقت آگیا ہے کہ بین الاقوامی برادری اپنی توجہ مقبوضہ کشمیر کی طرف مرکوز کرے اور کشمیریوں کو گزشتہ 72سالوں سے جاری ظلم سے نجات دلائے۔انہوں نے مزید کہا کہ اب جبکہ پوری دنیا کو کرونا وائرس کی وجہ سے ایک خطرناک صورتحال کا سامنا ہے ۔امریکا ،یورپ ،برطانیہ سمیت دنیا کے تمام ممالک میں صورتحال تشویشناک ہوچکی ہے جبکہ ہندوستان میں ابھی لاک ڈائون نے ہندوستان میں کروڑوں عوام بھوک کی وجہ سے سڑکوں پر ہے ۔

انہوں نے کہا کہ یقینی طور پر ہندوستان پوری دنیا کو مقبوضہ کشمیر میں جہاں5اگست سے کشمیری لاک ڈائون کا سامنا کررہے ہیں،لاک ڈائون سے پیدا ہونے والے ومسائل ومشکلات کا احساس ہوا ہوگا۔ عالمی طاقتوں کو چاہیے کہ وہ مقبوضہ کشمیر میں طویل لاک ڈائون کو ختم کروائیں ۔