ہندوستان کا فالس فلیگ آپریشن نتیجہ خیز نہیں ہوسکتا۔ سردارعتیق

aiksath.com.pk

مظفرآباد:  آل جموں وکشمیر مسلم کانفرنس کے قائد وسابق وزیراعظم سردارعتیق احمدخان نے کہا کہ گزشتہ 10ماہ سے مقبوضہ کشمیر سری نگرکی صورتحال انتہائی تشویشناک ہے ۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ انسانی جانیں خطرے میں اور ہسپتال ویران ہیںہندوستانی فوج انسانی حقوق کی بدترین پامالی میں مصروف ہے ۔ایسے حالات میں کرونا وائرس کا نیا سلسلہ شروع ہوا اس میں بھی مقبوضہ کشمیر میں علاج معالجہ کی سہولیات کو محدود کردیاگیا۔کرونا وائرس کے مریضوں کو دور دراز سے لا کر آبادیوں میں چھوڑا جارہا ہے جس کا مقصد کرونا وائرس کا زیادہ سے زیادہ پھیلائو کیاجائے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہندوڈاکٹروں نے مسلمانوں کا علاج معالجہ کرنے سے انکار کردیا ہے دوسری جانب نسلی و مذہبی تعصبا ت کا مظاہرہ کیاجارہا ہے۔کئی جگہ ہندوں مریضوں نے مسلمان ڈاکٹروں سے علاج معالجہ کروانے سے انکار کردیااس قسم کے نسلی امتیاز کا ایک طرف مظاہرہ ہورہا ہیدوسری جانب سیز فائر لائن پر ہندوستانی کی جانب سے فائرنگ کا سلسلہ بڑھتا جارہا ہے۔ ایسے حالات میں عالمی برادری کو صورتحال کا نوٹس لیناچاہیے۔

انہوں نے کہاکہ حکومت پاکستان نے بساط پر اس پر بات کی ہے مقبوضہ کشمیر میں حریت قیادت کی جانوں کومسلسل خطرات لاحق ہیںحریت رہنما سید علی گیلانی اور یٰسین ملک ،میرواعظ عمرفاروق ،آسیہ اندرابی،شبیرشاہ اور دیگرحریت قیادت کو تحفظ فراہم کرنا بہت ضروری ہوگیا ہے۔

سردار عتیق خان کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر سے فوجیوں کا انخلائ،مقبوضہ کشمیر میں آبادی کے مراکز سے فوجیوں کی واپسی اور ایسے اقدامات جن سے یہ پتا چلے کہ کشمیر پر جبری قبضہ میں کمی واقع ہورہی ہے ان حالات سے توجہ ہٹانے کے لیے ہندوستان نے لائن آف کنٹرول کا رخ کیا ہے اور جنگ چھیڑنے کی کوشش کی جارہی ہے ہندوستان کو اس بات کا علم ہے کہ پاکستانی فوج سے لڑا نہیں جاسکتا اس کے کئی اسباب ہیںجس طرح  پاکستانی فوج نے دہشت گردوں کے خلاف بڑی کامیابی حاصل کی ہے نیٹو فورس افغانستان میں ناکام ہوگئی دنیا کی فوجیں ناکام ہوگئیں لیکن پاکستان کی فوج نے دہشت گردی کا مقابلہ کیا۔

انہوں نے مزیدکہا کہ مقبوضہ جموں وکشمیر کی صورتحال عالمی برادری کی فوری توجہ کا تقاضہ کرتی ہے ۔فالز فلیگ آپریشن کا ہندوستانی خوب کبھی نتیجہ خیز نہیں ہوسکتا۔ ہندوستان کی چھوٹی سے غلطی اور عالمی بردادری کی عدم توجہی خطے کو کسی بڑے حادثے کی لپیٹ میں لے سکتا ہے ۔ ہندوستان کی توسیع پسندانہ عزائم امن عالم کے لیے  خطرہ کے باعث ہے ۔مقبوضہ کشمیر کی حتمی آزادی تک آخری کشمیری بھی میدان میں کھڑا رہے گا۔

انہوں نے کہاکہ ہندوستان کا جنگی جنون خود بھارتی سلامتی کے لیے خطرات کا باعث بن سکتا ہے ۔پاکستان کے علاقائی اور عالمی کامیابیوں نے ہندوستان کو بدحواس کردیا ہے ۔ انہوں نے مزیدکہا کہ جموں وکشمیر کی عوام اپنی آزادی اور تکمیل پاکستان دونوں کی جنگ لڑتے رہیں گے۔ دو کروڑ کشمیری عوام حریت قیادت کے ہم قدم کھڑے ہیںپرامن ذرائع کی ہندوستانی بندش عسکریت کا راستہ ہموارکررہی ہے