عدالت عظمٰی نے نیشنل اسپتال فیصل آباد کا انتظامی کنٹرول فلاحی تنظیم کے حوالگی پر درخواست پر سماعت

aiksath.com.pk

اسلام آباد: عدالت عظمٰی نے نیشنل اسپتال فیصل آباد کا انتظامی کنٹرول فلاحی تنظیم  کے حوالے کرنے کے خلاف ضلعی انتظامیہ کی درخواست پر سماعت کرتے ہوئے اسپتال کا چھ سالہ آڈٹ رپورٹ طلب کرلی ہے.

جسٹس مشیر عالم  کی سربراہی میں دو رکنی بینچ نےنیشنل اسپتال فیصل آباد کا انتظام فلاحی تنظیم کو دینے کا فیصلہ معطل کرنے کی ضلعی انتظامیہ کی استدعا  مسترد کردی اور آبزرویشن دی کہ آڈٹ رپورٹ کا جائزہ لینے کے بعد مقدمے کا فیصلہ کیا جائے گا۔

جمعہ کو کیس کی سماعت ہوئی تو سرکاری وکیل نے ہائی کورٹ کا فیصلہ معطل کرنے کی استدعا کی لیکن فلاحی تنظیم کے وکیل نےاس کی مخالفت کی اور عدالت کو بتایا ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کی رپورٹ آ چکی ہے.

انھوں نےکہا رپورٹ کے مطابق ضلعی انتظامیہ نے اسپتال کو نقصان پہنچایا جب اسپتال ضلعی انتظامیہ کے زیر انتظام تھا تو اسپتال کی مشینری خراب ہو گئی  اورمریضوں کی آمد و رفت بھی بہت محدود ہوئی ۔

وکیل فلاحی تنظیم نے الزام لگایا کہ ضلعی انتظامیہ کی جانب سے ہائی کورٹ کے فیصلے کی خلاف ورزی ہورہی ہے، ڈی سی فیصل آباد ہائی کورٹ کے حکم پر عمل نہیں کر رہے بلکہ عدالت کے حکم کے برعکس ڈی سی فیصل آباد نے 34 کروڑ روپیہ کا تقاضہ کیا ہے۔

جس پر جسٹس مشیر عالم نے کہا ڈی سی فیصل آباد کو بتا دیں ،عدالت سے غلط بیانی کی تو نوکری نہیں بچے گی۔