وزیر ریلوے کا کورونا وائرس کے پیش نظر مرحلہ وار 34 ٹرینیں بند کرنے کا اعلان

aiksath.com.pk

اسلام آباد :وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے کورونا وائرس کے پیش نظر مرحلہ وار 34 ٹرینیں بند کرنے کا اعلان کر دیا.

جبکہ شیخ رشید نے کرونا وائرس کے خطرے سے بے خوف ہوکر معمول کے مطابق لال حویلی میں کھلی کچہریاں جاری رکھنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ میرا ایمان ہے جو رات قبر میں آنی ہے اسے کوئی نہیں روک سکتا، سوموار اور جمعرات کو معمول کے مطابق کھلی کچہری میں عوام سے ملتا رہوں گا، لال حویلی بند نہیں ہوگی،

وزیراعظم عمران خان سے ملاقات کے بعد اسلام آباد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شیخ رشید نے کہا کہ کرونا وائرس کے پیش نظر پہلے مرحلے میں 34ٹرینیں بند کرنے کا اعلان کردیا گیا کرونا وائرس کے حوالے سے ریلوے کی ذمہ داریوں پر وزیر اعظم سے ملاقات کی حفاظتی اقدامات پر بریفنگ دی وائرس سے بچاؤ کے لئے تجاویز سے آگاہ کیا ۔

انہوں نے کہا کہ ریلوے کے سالانہ سات کروڑ روزانہ دو لاکھ مسافر ہیں۔ کرونا کی وجہ سے ایک لاکھ ساٹھ تک مسافروں کی تعدادآگئی ہے۔ فوری طور پر بارہ ٹرینیں بند کر رہے ہیں اگر ضرورت پیش آئی تو مزید بند کریں گے ۔پچیس مارچ کو مزید ٹرینیں بند کرنے کا فیصلہ ہوگا ۔پہلے سے بکنگ کا ریفنڈ ہوگا ۔لاہور کراچی اور پنڈی میں رش کم کرنے کیلئے اسٹیشنز کی تعداد بڑھائی ہے۔ سندھ حکومت کی تجویز بھی تھی پوری سروس بند کی تو پنشن اور تنخواہ کے پیسے نہیں ہیں۔ بائیس مارچ سے بارہ یکم اپریل سے بیس بند کر سکتے ہیں ۔جلد چینی صدر پاکستان آئیں گے ایم ایل ون کا افتتاح کریں گے۔ ایک سو چونتیس میں سے چونتیس بند کرنے جا رہے ہیں۔ کرونا کی مکمل ٹیسٹکنگ نہیں ہے۔

انھوں نے کہا کہ چونتیس ٹرینیں بند کرنے سے ملازمین کی تنخواہیں نہیں رکیںگی اس سوال کہ کیا لال حویلی بھی آئی سو لیشن میں تبدیل ہو گی شیخ رشید نے کہا کہ احتیاطی تدابیرضروری ہے بلاوجہ خوف و ہراس نہ پیدا کیا جائے لال حویلی بند نہیں ہوگی میں سوموار اور جمعرات کو اسی طرح بیٹھتا ہوں عوام سے ملتا جلتا رہوں گا کھلی کچہری لگے گی موت کا دن متعین ہے یہ میرا ایمان ہے جو رات قبر میں آنی ہے اسے کوئی نہیں روک سکتا ۔