کشمیر پر ٹرمپ کی ثالثی پاکستان کے مفاد کے خلاف ہے،وزیراعظم آزادکشمیر

aiksath.com.pk

لاہور (ویب ڈیسک) وزیراعظم آزادکشمیر راجہ فاروق حیدر خان نے کہا ہے کہ کشمیر پر ٹرمپ کی ثالثی پاکستان کے مفاد کے خلاف ہے اگر کشمیر پر مجھے موقف پیش کرنے دیا جائے تو زیادہ بہتر اندازمیں پیش کر سکوں گاـ

مسئلہ کشمیر کے حل کے لئے اقوام متحدہ کی قراردادوں پر عملدرآمدہونا چاہیےـ ان خیالات کا اظہار انہوںنے پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر وقومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف میاں شہباز شریف سے ملاقات کے بعد گفتگو کرتے ہوئے کیاـ اس موقع پر مسلم لیگ ن کے مرکزی راہنما اراکین قومی اسمبلی شیخ روحیل اصغر ،خواجہ حسان ،مرکزی اسسٹنٹ سیکرٹری عطا اللہ تارڑ ،عظمی بخاری و دیگر موجود تھے۔

راجہ فاروق حیدر نے کہا کہ میاں شہباز شریف کو پانچ اگست کے بعد سے اب تک کشمیر کی صورتحال سے آگاہ کیاـ انہوںنے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے معاملے پر ابھی بہت کچھ کرنے کی ضرورت ہے اس مسئلہ کے حل کیلئے ثالثی کی کوئی ضرورت نہیں ـ امریکی صدر ٹرمپ کی ثالثی پاکستان کے مفاد کے خلاف ہے ـ انہوںنے کہا کہ اگر مجھے کشمیر کا موقف پیش کرنے دیا جائے تو میں اسے زیادہ بہتر طور پر پیش کر سکوں گاـ انہوںنے کہا کہ کشمیریوں کے پاس کھونے کیلئے کچھ نہیں ہے ـانہوںنے کہا کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق حل ہونا چاہیے ـ

آزاد کشمیر کے لوگوں پر کشمیر کی بارڈر لائن کراس کرنے کی کوئی پابندی نہیں ہےـ وزیر اعظم آزاد کشمیر نے کہا کہ میں نے میاں شہبازشریف کو کشمیر کی صورتحال سے متعلق آگاہ کیا اور انہیں آزاد کشمیر آنے کی دعوت بھی دی ہے ـراجہ فاروق حیدر نے امید ظاہر کی کہ ارباب اختیار ان کی بات پر دھیان دیں گے