سعودی عرب میں عیدالفطر کے موقع پر مکمل لاک ڈاون

aiksath.com.pk

جدہ :سعودی عرب نے کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے عیدالفطر کی تعطیلات کے دوران میں 23 مئی سے 27 مئی تک 24 گھنٹے کا کرفیو اور لاک ڈاون نافذ کرنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ رمضان کے اختتام تک شہروں میں نافذ کرفیو میں نرمی جاری رہے گی

۔سعودی حکومت کے اعلان کے مطابق لوگوں کو صبح نو بجے سے پانچ بجے تک روزانہ اپنے گھروں سے باہر نکلنے کی اجازت ہے۔ وہ اشیائے ضروریہ کی خریداری یا دوا دارو اور ضروری کاموں کے لیے گھروں سے باہر جاسکتے ہیں۔سعودی وزارتِ داخلہ نے کہا ہے کہ مکہ مکرمہ میں بدستور مکمل لاک ڈاون اور کرفیو نافذ رہے گا اور یہ پابندیاں رمضان کے اختتام اور پھر عید الفطر کے ایام میں بھی جاری رہیں گی۔

سعودی عرب نے 26 اپریل کو ملک بھر میں نافذ کرفیو میں جزوی نرمی کا اعلان کیا تھا اور کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے عاید کردہ پابندیوں میں نرمی کردی تھی۔ تاہم مکہ مکرمہ اور بعض دوسرے علاقوں میں نافذ لاک ڈاون کو نہیں ہٹایا گیا تھا اور اس کو 13 مئی تک برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ اب اس میں رمضان کے آخر تک توسیع کردی گئی ہے۔دریں اثنا سعودی عرب نے کرونا وائرس کے 1911 نئے کیسوں کی تصدیق کی ہے اور اس مہلک وبا کا شکار نو افراد وفات پاگئے ہیں۔

سعودی وزارت صحت کے مطابق مملکت میں اب کرونا وائرس کے کل کیسوں کی تعداد 42925 ہوگئی ہے۔ان میں 264 افراد وفات پا چکے ہیں،وزارت صحت کے ترجمان محمد العبد العالی نے بتایا کہ کرونا کے نئے کیسوں میں 69 فی صد غیر سعودی مکین ہیں اور 31 فی صد سعودی شہری ہیں۔نئے تشخیص شدہ کیسوں میں 82 فی صد مرد حضرات اور 18 فی صد خواتین ہیں۔

ترجمان نے بتایا ہے کہ کرونا وائرس سے وفات پانے والے نو افراد میں دو سعودی شہری ہیں اور سات غیرسعودی ہیں۔وہ مکہ مکرمہ ، جدہ ، نجد میں واقع وادی الدوسیر میں رہ رہے تھے۔ان کی عمریں 29 اور 64 سال کے درمیان تھیں اور وہ پہلے بھی مختلف دائمی امراض کا شکار تھے۔ڈاکٹر العبدالعالی نے شہریوں اور مکینوں پر زوردیا ہے کہ وہ کرونا وائرس سے بچا کے لیے حفاظتی احتیاطی تدابیر اختیار کریں اور ایک دوسرے سے فاصلہ اختیار رکھیں۔

ان کا کہنا ہے کہ نئے متاثرہ کیسوں میں دسیوں افراد نے شادی تقریبات ، جنازوں اور خاندانوں کے اجتماعات میں شرکت کی تھی۔اجتماعی افطار میں شرکت کرنے والے چار خاندانوں کے افراد بھی کرونا وائرس کا شکار ہوگئے ہیں۔ان میں ایک خاندان پہلے سے متاثرہ تھا اور پھر اس نے اپنے ساتھ دوسروں کو بھی اس مہلک وبا کا شکار کردیا ہے۔سعودی عرب میں اب تک کرونا وائرس کاشکار ہونے والے 15257 افراد صحت یاب ہوچکے ہیں